ماں

1
420


اے ماں تیرے بارے میں، میں کیا لکھوں
وفا کا پیکر یا جنت کی ہوا لکھوں

میرے رب کا توں سب سے حَسیں تحفہ ہے
تجھ بن ذندگی میری میں بددعا لکھوں

کمال ضبط سے گھر کو ہے سنوارا تو نے
امن کی فاختہ رشتوں کی اک بقا لکھوں

تیری آغوش میں ملتا ہے سکونِ ابدی
تیری میں گود میں سونے کو اک عطاء لکھوں

ہنسی تیری سے منسلک ہے راحتِ دنیا
تیرے ہونے کو میں خوشیوں کی انتہا لکھوں

نینّ نازاں ہے یا رَب اپنی قسمت پے
ہے دعا قائم رہے سایہ یہی صدا لکھوں

1 COMMENT

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here